عالمی بینک نے پاکستان کو ہاؤسنگ کے شعبے میں 29 کروڑ ڈالر قرض کی پیشکش کر دی


Post Views:
8

اسلام آباد: وفاقی وزیر ِخزانہ شوکت ترین کی زیرِ صدارت ہاؤسنگ کے شعبے سے متعلق ایک اہم اجلاس ہوا جس میں عالمی بینک کے علاقائی دفتر  اور نیا پاکستان ہاؤسنگ اینڈ ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ 

چیئرمین نیا پاکستان ہاوسنگ اینڈ ڈیولپمنٹ اتھارٹی، لیفٹینینٹ جنرل (ریٹائرڈ) انور علی اور عالمی بینک کے پاکستان میں قائم علاقائی دفتر کے سربراہ ناجے بین ہاسن اور وزیر اعظم کے معاون خصوصی برائے امور ِخزانہ بھی اجلاس میں موجود تھے۔

 عالمی بینک کے پاکستان میں نمائندہ نے کہا کہ بینک پاکستان کو ہاؤسنگ کے شعبے کے لیے 29 کروڑ ڈالر قرض کی پیشکش میں دلچسپی رکھتا ہے۔

 انہوں نے کہا کہ عالمی بینک حکومت کو ہاوسنگ کے شعبے کی ترقی میں ہر ممکن تعاون فراہم کرے گا۔

 وفاقی وزیر ِخزانہ شوکت ترین نے عالمی بینک کے پاکستان میں نمائندے کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اس بات کا یقین دلایا کہ ہاؤسنگ کے شعبے میں ترقی پاکستان کے معاشی استحکام میں اہم کردار ادا کرے گی۔

 مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔

 




نیا پاکستان ہاؤسنگ پروگرام کے تحت 45 ہزار ہاؤسنگ یونٹس کی تعمیر جاری


Post Views:
5

اسلام آباد: وزیرِ اعظم کے مشیر برائے پارلیمانی اُمور ڈاکٹر بابر اعوان نے جمعرات کے روز سینیٹ میں اظہارِ خیال کرتے ہوئے کہا کہ نیا پاکستان ہاؤسنگ پروگرام کے تحت 45 ہزار ہاؤسنگ یونٹس کی تعمیر جاری ہے۔

اُن کا کہنا تھا کہ لاہور، نوشہرہ، اسلام آباد اور پشاور سمیت مُلک بھر میں ہاؤسنگ یونٹس کی تعمیر پر کام جاری ہے۔

بابر اعوان کا کہنا تھا کہ نجی سیکٹر کی جانب سے نیا پاکستان ہاؤسنگ اینڈ ڈیویلپمنٹ اتھارٹی کو 30 لاکھ سے زائد گھروں کی تعمیر کے لیے 180 پروپوزل جمع کرائے گئے ہیں۔

اُنہوں نے کہا کہ اِن میں سے 45 پراجیکٹ ڈیویلپمنٹ کمپنیاں مختص کرلی گئی ہیں جو کہ 70 ہزار سے زائد ہاؤسنگ یونٹس کی تعمیر کریں گی۔

اُن کا مزید کہنا تھا کہ اسلام آباد میں سرکاری اراضی پر 2300 گھروں کی تعمیر کا منصوبہ بھی جاری ہے اور اسے جلد مکمل کیا جائے گا۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




ڈیجیٹل پاکستان وژن کے تحت آئی ٹی برآمدات میں 43 فیصد اضافہ


Post Views:
0

 

اسلام آباد:  ڈیجیٹل پاکستان وژن کے تحت ملک میں ایک سال کے دوران آئی ٹی ایکسپورٹ میں 5 کروڑ 90 لاکھ امریکی ڈالر کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم کے مشیر برائے تجارت اور سرمایہ کاری عبدالرزاق دائود نے کہا ہے کہ آئی ٹی کی برآمدات میں 43 فیصد اضافہ خوش آئند ہے۔

ایک ٹویٹ میں انہوں نے آئی ٹی برآمدات میں نمایاں اضافے پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ 2020 میں آئی ٹی برآمدات بڑھ کر 194 ملین ڈالر ہو گئیں ہیں ۔ 2019 میں یہ برآمدات 135 ملین ڈالر تھیں۔

وفاقی ادارہ شماریات کے مطابق جولائی تا دسمبر 2020 میں پچھلے سال کے مقابلے میں چالیس فیصد اضافہ ہوا ہے۔ آئی ٹی کی برآمدات اب کل خدمات کی برآمدات کا 33 فیصد ہیں ۔ وزیراعظم کے مشیر برائے تجارت اور سرمایہ کاری  نے اس امید کا اظہار کیا کہ اس سال آئی سی ٹی کی برآمدات دو ارب ڈالر سے تجاوز کر جائیں گی۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔

 




سی پیک کے تحت پاکستان میں اب تک 13 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری ریکارڈ، چیئرمین سی پیک اتھارٹی


Post Views:
1

لاہور: چیئرمین سی پیک اتھارٹی لیفٹننٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ کا کہنا ہے کہ پاک چین اقتصادی راہداری کے تحت اب تک پاکستان میں 13 ارب ڈالر کی براہِ راست سرمایہ کاری ہوچکی ہے۔

اُن کا کہنا تھا کہ 12 ارب ڈالر کی مزید سرمایہ کاری پائپ لائن میں ہے جس سے پاکستان کی معاشی تصویر مکمل طور پر بدل جائے گی۔

اُنہوں نے کہا کہ پاکستان میں مزید اقتصادی زونز کا قیام کیا جائے گا جس سے بیرونی سرمایہ کاری کا فروغ ہوگا۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




سی پیک کے تحت پاکستان میں اب تک 13 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری ریکارڈ، چیئرمین سی پیک اتھارٹی


Post Views:
4

لاہور: چیئرمین سی پیک اتھارٹی لیفٹننٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ کا کہنا ہے کہ پاک چین اقتصادی راہداری کے تحت اب تک پاکستان میں 13 ارب ڈالر کی براہِ راست سرمایہ کاری ہوچکی ہے۔

اُن کا کہنا تھا کہ 12 ارب ڈالر کی مزید سرمایہ کاری پائپ لائن میں ہے جس سے پاکستان کی معاشی تصویر مکمل طور پر بدل جائے گی۔

اُنہوں نے کہا کہ پاکستان میں مزید اقتصادی زونز کا قیام کیا جائے گا جس سے بیرونی سرمایہ کاری کا فروغ ہوگا۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




چین اور پاکستان کے مابین تجارت میں 31 فیصد اضافہ


Post Views:
3

اسلام آباد: رواں مالی سال کے ابتدائی دس ماہ میں چین اور پاکستان کے مابین تجارت میں 31 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

اضافے کے بعد چین کو پاکستانی برآمدات کا حجم 1.9 ارب ڈالر ریکارڈ کیا گیا۔

وزیرِ اعظم کے مشیر برائے کامرس عبدالرزاق داؤد نے اس اضافے کی وجہ پاکستان اور چین کے مابین فری ٹریڈ ایگریمنٹ کو قرار دیا جو کہ یکم جنوری 2020 سے نافذ العمل ہے۔

گزشتہ معاشی سال کے ابتدائی 10 ماہ میں برآمدات 1.491 ارب ڈالر کی سطح پر تھیں۔

ماہرین نے کورونا وبا کے معاشی اثرات کے باوجود اس اضافے کو ایک مثبت ڈیویلپمنٹ قرار دیا ہے۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔