گندھارا ویلی سٹی کی فزیبلٹی اسٹڈی اگلے پانچ ماہ میں مکمل ہو جائے گی: وزیربلدیات خیبر پختونخواہ


Post Views:
2

پشاور: خیبرپختونخوا کے وزیر بلدیات اکبر ایوب خان نے کہا ہے کہ گندھارا ویلی سٹی کے نام سے نیا شہر بسانے کا ہدف پختونخواہ ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے سپرد کر دیا گیا ہے اور فزیبلٹی اسٹڈی کا عمل اگلے پانچ ماہ میں مکمل کر لیا جائے گا۔

صوبائی وزیر پشاور ڈویلپمنٹ اتھارٹی (پی ڈی اے) ہیڈکوارٹر حیات آباد میں اتھارٹی کے جائزہ اجلاس سے خطاب کر رہے تھے۔

اتھارٹی کی ڈائریکٹر جنرل امارہ خان نے اس موقع پر پشاور کے ترقیاتی منصوبوں پر تازہ ترین احوال سے انہیں آگاہ کیا جبکہ اجلاس میں تمام شعبوں کے ڈائریکٹرز کے علاوہ سپیشل سیکرٹری بلدیات معتصم بااللہ شاہ اور متعلقہ وفاقی و صوبائی اداروں کے نمائندوں نے بھی شرکت کی۔

صوبائی وزیر اکبر ایوب خان نے پی ڈی اے کی کارکردگی پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ رنگ روڈ کی تکمیل کیلئے ورسک روڈ سے ناصرباغ روڈ تک شاہراہ کے ابتدائی تخمینے کی منظوری اور اراضی کے حصول کا کام جلد نمٹانے کیلئے متعلقہ محکموں کو ہدایات جاری کر دی گئی ہیں۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




چینی سرمایہ کاروں کو پاکستان میں ہر ممکن سہولت فراہم کی جائے گی: وزیر خزانہ شوکت ترین


Post Views:
2

اسلام آباد: وفاقی وزیرِ خزانہ شوکت ترین کا کہنا ہے کہ پورے خطے میں معاشی ترقی کے لئے اقدامات کی ضرورت ہے اور حکومت چینی سرمایہ کاروں کو پاکستان میں ہر ممکن سہولت فراہم کرے گی۔

وزیرِ خزانہ شوکت ترین نے پاکستان میں تعینات چین کے سفیر نونگ رونگ سے ملاقات کی جس میں پاک چین اقتصادی تعاون، سی پیک منصوبوں اور سرمایہ کاری کے مواقعوں پر تفصیلی بات چیت کی گئی۔

وزیر خزانہ شوکت ترین کا کہنا تھا کہ حکومت غیر ملکی سرمایہ کاری کے فروغ کے لئے کوشاں ہے جبکہ چینی سرمایہ کاروں کے لئے پاکستان میں زراعت اور صنعتی شعبے میں وسیع تر مواقعے موجود ہیں۔

چینی سفیر نونگ رونگ نے کہا کہ چین پاکستان میں معاشی سرگرمیوں کے فروغ کے لیے مزید اقدامات اٹھانے کو تیار ہے اور چینی حکومت اور کاروباری ادارے پاکستان میں سرمایہ کاری میں حائل رکاوٹیں دور کرنے میں ہر ممکن مدد فراہم کریں گے۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




راولپنڈی میں جاری ترقیاتی منصوبوں کو بر وقت پایہ تکمیل تک پہنچایا جائے: راجہ عامر کیانی


Post Views:
1

راولپنڈی: پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اور رکن قومی اسمبلی راجہ عامر کیانی نے کہا ہے کہ ضلع راولپنڈی میں جاری ترقیاتی منصوبوں کو بر وقت پایہ تکمیل تک پہنچایا جائے کارکردگی پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے جم خانہ راولپنڈی میں ضلعی رابطہ کمیٹی اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ اجلاس میں ضلع راولپنڈی میں جاری ترقیاتی منصوبوں پر ہونے والی پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔

انہوں نے انتظامی حکام کو ہدایات جاری کیں کہ کہ پانی کی قلت کو پورا کرنے کے کے لیے چھوٹے ڈیمز پر کام تیز کیا جائے تاکہ شہریوں کو پینے کا صاف پانی میسر آ سکے۔

عامر کیانی نے کہا کہ پاکستان کی ترقی و خوشحالی کے لیے وزیر اعظم عمران خان دن رات کوشاں ہے اور آئندہ آنے والے دنوں میں عوام کو واضع تبدیلی نظر آئے گی۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




مارگلہ روڈ پر کام کل سے شروع کیا جائے گا


Post Views:
5

اسلام آباد: وزیرِ اعظم کے معاونِ خصوصی برائے اُمورِ سی ڈی اے علی نواز اعوان کا کہنا ہے کہ مارگلہ روڈ منصوبے پر کام کا آغاز کل (جمعرات) سے کیا جائے گا۔

سی ڈی اے کے مطابق جمعرات کو اس ضمن میں ایک تقریب کا انعقاد کیا جائے گا جس میں وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اسد عُمر مہمانِ خصوصی ہوں گے۔ تقریب کے بعد باقاعدہ طور پر کام کا آغاز کردیا جائے گا۔

منصوبے کا افتتاح وزیرِ اعظم عمران خان نے اپریل میں کیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق یہ منصوبہ دو حصوں پر مشتمل ہے جس میں پہلا مرحلہ سنگجانی تا ڈی 12 سڑک کی تعمیر کا ہے جبکہ دوسرا شاہراہِ دستور سے سترہ میل مری روڈ تک ہے۔

سڑک کی تعمیر کا کنٹریکٹ فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن (ایف ڈبلیو او) کو دیا گیا ہے۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




پی ڈبلیو ڈی انڈر پاس پر کام جولائی تک مکمل کیا جائے گا، سی ڈی اے


Post Views:
7

اسلام آباد: کیپیٹل ڈیویلپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) نے اعلان کیا ہے کہ پی ڈبلیو ڈی انڈر پاس پر کام رواں سال جولائی تک مکمل کرلیا جائے گا۔

سی ڈی اے کے مطابق پی ڈبلیو ڈی انڈر پاس اور کورنگ برج پر کام جاری ہے تاہم کورنگ برج کی توسیع پر کام دسمبر میں مکمل کیا جائے گا۔

سی ڈی اے نے اس ضمن میں واپڈا اور ایس این جی پی ایل کو خطوط ارسال کردیئے ہیں تاکہ کام کی بروقت تکیمل یقینی بنائی جا سکے۔

سی ڈی اے کے جاری کردہ پریس ریلیز کے مطابق کورونا وبا کے باوجود کام کی رفتار تیز کی گئی ہے تاکہ شہریوں کی آسانی یقینی بنائی جا سکے۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




پی ڈبلیو ڈی انڈر پاس پر کام جولائی تک مکمل کیا جائے گا، سی ڈی اے


Post Views:
1

اسلام آباد: کیپیٹل ڈیویلپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) نے اعلان کیا ہے کہ پی ڈبلیو ڈی انڈر پاس پر کام رواں سال جولائی تک مکمل کرلیا جائے گا۔

سی ڈی اے کے مطابق پی ڈبلیو ڈی انڈر پاس اور کورنگ برج پر کام جاری ہے تاہم کورنگ برج کی توسیع پر کام دسمبر میں مکمل کیا جائے گا۔

سی ڈی اے نے اس ضمن میں واپڈا اور ایس این جی پی ایل کو خطوط ارسال کردیئے ہیں تاکہ کام کی بروقت تکیمل یقینی بنائی جا سکے۔

سی ڈی اے کے جاری کردہ پریس ریلیز کے مطابق کورونا وبا کے باوجود کام کی رفتار تیز کی گئی ہے تاکہ شہریوں کی آسانی یقینی بنائی جا سکے۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




پشاور تا ڈی آئی خان موٹروے پر کام جلد شروع کیا جائے گا، وزیرِ اعلیٰ محمود خان


Post Views:
0

پشاور: وزیرِ اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان کا کہنا ہے کہ پشاور تا ڈی آئی خان موٹروے پر کام رواں حکومتی دور میں شروع کردیا جائے گا۔

وہ پشاور تا ڈی آئی خان موٹروے سے متعلق ایک اجلاس کی صدارت کررہے تھے جس میں اُنہوں نے اس منصوبے کو صوبے کے لیے کلیدی اہمیت کا حامل قرار دیا۔

اُن کا کہنا تھا کہ حکومت ابھی اس منصوبے کی فنڈنگ سے متعلق ذرائع کا تعین کررہی ہے۔

اُن کا کہنا تھا کہ سینٹرل ڈیویلپمنٹ ورکنگ پارٹی اپنے اگلے اجلاس میں منصوبے کی تکنیکی کلیئرنس دے گی۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




گھر کو محفوظ کیسے بنایا جائے؟


Post Views:
1

یوں تو مثبت سوچ رکھنا ضروری ہے تاکہ انسان تمام تر فکروں سے آزاد زندگی گزار سکے۔ مگر کہیں نہ کہیں حقائق کی روشنی میں انسان کو ضروری اقدامات کرنے چاہئیں تاکہ موجودہ دور میں تمام تر چیلنجز سے نبرد آزما ہوا جا سکے۔ ہم ایک ایسے دور میں رہ رہے ہیں جس میں آپ دنیا کے کسی بھی خطے اور کسی بھی حصے میں موجود ہوں، اپنے آپ کو محفوظ کرنا اور رکھنا اولین ترجیحات میں شامل ہونا چاہیے۔ یوں تو کہا جاتا ہے کہ خود کو محفوظ کرنا ہی غیر محفوظ ہونے کی سب سے بڑی دلیل ہے مگر حقیقت یہی ہے کہ خود کو محفوظ کرنے کے اقدامات اٹھانا دانشمندانہ فیصلوں میں سے ایک ہے۔

یہ تو ابتدائیہ ہوگیا جس میں حفاظت اور اس کی اہمیت پر روشنی ڈالی گئی۔ اب ذرا گھر کی بات کرلیتے ہیں۔ انسان کا گھر اُس کا سب کچھ ہوتا ہے۔ وہ اس کے لیے امن و سکون کا گہوارہ ہوتا ہے، اُس کے تمام تر ذاتی سامان کا مسکن ہوتا ہے اور اس کی ایک ایسی آرام گاہ ہوتا ہے جس سے وہ ہر صبح تر و تازہ ہو کر نکلتا ہے تاکہ دنیا کا مقابلہ کیا جا سکے۔ اس گھر کا محفوظ ہونا بہت ضروری ہے۔ نہ صرف اس لیے کہ انسان جب اُس میں ہو تو وہ خود کو غیر محفوظ نہ محسوس کر سکے بلکہ اس لیے بھی کہ جب وہ گھر پر نہ ہو تو اُس کو کسی قسم کا فکر فاقہ پریشان نہ کر سکے۔

آج کی تحریر اس حوالے سے ہے کہ گھر کو محفوظ بنانے کے لیے کون کون سے اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔

ویڈیو ڈور بیل

ایک بین الاقوامی جریدے کے مطابق ڈکیتی کے واقعات میں 34 فیصد حصہ اُن واقعات کا ہے جس میں چوری کی نیت سے آئے افراد گھر کے مرکزی دروازے سے داخل ہوتے ہیں۔ اس ضمن میں ویڈیو ڈور بیل کا استعمال مفید ثابت ہوسکتا ہے۔

ضروری ہے کہ آپ کے گھر کا مرکزی دروازہ محفوظ ہو۔ آپ تمام تر زور لگا کر خود بھی اس کا اطمینان کرلیں کہ آپ کا دروازہ ہلکے سے دباؤ سے کھلتا تو نہیں ہے۔ آپ کو اس بات کا یقین کرنا ہوگا کہ آپ کے ہاں بہترین لاک سسٹم ہو اور اُسے پورے طریقے سے استعمال میں لا کر ہی آپ گھر سے نکلیں۔ اکثر ایسا ہوتا ہے کہ چونکہ ہمیں مختصر دورانیے کے لیے گھر سے نکلنا ہوتا ہے تو ہم عارضی سا لاک لگا کر گھر سے باہر چلے جاتے ہیں۔ یاد رکھیں کہ آپ اگر طویل دورانیے کے لیے گھر سے نکل رہے ہیں یا مختصر دورانیے کے لیے، آپ کو گھر مکمل طور پر لاک کرنا ہوگا۔

گھر کے اطراف میں سیکورٹی کیمروں کا استعمال

یہ آجکل مفید بھی ہے اور اب ایک انتہائی سستا آپشن بھی۔ وہ دن گئے جب لوگ اخراجات کے ڈر سے سیکورٹی کیمروں کا استعمال نہیں کرتے تھے۔

اب آپ چند ہزار میں گھر کے گرد ایسے کیمرے لگا سکتے ہیں جو کہ آپ کو چاروں اطراف کی ویڈیو فوٹیج ریکارڈ کر کے فراہم کر سکیں۔ کیمروں کا یہ اثر بھی ہوتا ہے کہ لوگ صرف ان کی صورت دیکھ کر ہی ہوشیار ہوجاتے ہیں کہ گویا وہ کسی کی نظر میں ہیں۔

روشنی کا بھرپور استعمال یقینی بنائیں

چوری کی غرض سے آئے افراد روشنی سے نفرت کرتے ہیں۔ وہ کسی صورت اسپاٹ لائٹ میں نہیں آنا چاہتے۔ اس بات کو اچھے سے ذہن نشین کر کے آپ خود کو اور اپنے مال و متاع کو محفوظ کر سکتے ہیں۔

گھر کا فرنٹ اور بیک یارڈ مکمل طور پر روشن رکھیں۔ موشن ایکٹیویٹڈ لائٹس کا استعمال بھی مفید ثابت ہوسکتا ہے جو کہ ذرا سی حرکت پر ہی روشن ہوسکتے ہیں۔ آؤٹ ڈور لائٹوں کو ٹائمر پر بھی لگایا جا سکتا ہے کہ شام ہوتے ہی وہ خود بخود روشن ہوجائیں تاکہ آپ کو تسلی اور اطمینان رہے۔

چھپنے کی تمام جگہیں ختم کریں

اکثر گھروں کے اطراف میں ایسے باڑ یا جگہیں ہوتی ہیں جہاں آسانی سے چھپا جا سکتا ہے۔ ایسے تمام تر درختوں، پودوں کو ختم کریں جو کہ گھر کی خوبصورتی میں تو اضافہ کریں مگر گھر کی سیکورٹی کو غیر یقینی بنا دیں۔

اکثر لوگ اندر پائی اور اسٹولز گھر کے باہر ہی رکھ چھوڑتے ہیں جس سے اُن کے گھر کے اندر تک رسائی آسان ہوسکتی ہے۔ اکثر لوگوں کے گھروں کی کھڑکیاں ایسی ہوتی ہیں کہ گھر سے باہر سے اندر کا قیمتی ساز و سامان نظر آرہا ہوتا ہے۔ آپ نے خود کو محفوظ کرنے کی غرض سے ایسی تمام تر توجہ مبذول کرانے والی چیزوں سے خود کو اور اپنے گھر والوں کو بچا کر رکھنا ہے۔ امریکہ میں ایک شخص کے ہاں صرف اس لیے چوری ہوگئی کہ اس نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر اپنے گھر کی چابیوں کی تصویر ڈال دی۔ اس سے کسی نے چابی میکر سے عین اسی طرح کی چابی بنوائی اور ہاتھوں کی صفائی دکھانے میں کامیاب ہوگیا۔

دروازے کو دُرست انداز میں استعمال کریں

اکثر گھروں میں یہ رواج ہوتا ہے کہ جیسے ہی گھنٹی بجتی ہے، بچے دروازے کی جانب دوڑ پڑتے ہیں۔ سب سے پہلے تو اگر آپ کے گھر میں ایسا ہوتا ہے تو آپ کو اس ریت کو ختم کرنا ہے۔ جب بڑے کسی مجبوری کے تحت گھر پر موجود نہ ہوں اور بچے گھر پر اکیلے ہوں تو سادگی میں بچے یہ بتا دیا کرتے ہیں کہ وہ گھر پر اکیلے ہیں اور کوئی بڑا موجود نہیں۔

اس سے باہر کے افراد کو یہ موقع ملتا ہے کہ وہ گھر کے اندر داخل ہوسکیں۔ اپنے بچوں کو منع کریں کہ کسی جانے اور انجانے کے لیے دروازہ نہ کھولیں اور اگر وہ صرف گھنٹی کی آواز سن کر ہی دروازے پر معلوم کرنے جائیں، تو آپ کو واپس آکر بتائیں کہ دروازے پر کون ہے۔ دروازہ آپ خود جا کر کھولیں۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




کوٹو ہائڈرو پاور پراجیکٹ رواں سال کے اختتام تک مکمل کرلیا جائے گا


Post Views:
1

اسلام آباد: کوٹو ہائڈرو پاور پراجیکٹ پر 90 فیصد کام مکمل کرلیا گیا ہے جبکہ باقی کام رواں سال کے آخر تک مکمل کرلیا جائے گا۔

اسسٹنٹ پراجیکٹ ڈائریکٹر نے ضلعی انتظامیہ کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ اس منصوبے سے 40.8 میگا واٹ بجلی پیدا ہوگی۔

اس منصوبے پر کام فروری 2015 میں شروع کیا گیا تھا اور کنٹریکٹ کے مطابق فروری 2019 میں پراجیکٹ کی تکمیل ہونا تھی۔

اگست 2014 میں قومی اقتصادی کونسل کی ایگزیکیٹیو کمیٹی نے منصوبے کو 13.9 ارب کی لاگت سے منظور کیا تھا۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




اسلام آباد کا ماسٹر پلان جلد تیار کیا جائے گا، وفاقی حکومت


Post Views:
7

اسلام آباد: وزیرِ مملکت برائے ماحولیاتی تبدیلی زرتاج گل نے قومی اسمبلی کو آگاہ کیا کہ اسلام آباد کے ماسٹر پلان پر کام جاری ہے اور اسے جلد مکمل کرلیا جائے گا۔

اُن کا کہنا تھا عمارات کی عمودی حد ختم کردی گئی ہے تاکہ زرعی زمین کا تحفظ کیا جا سکے۔

اُنہوں نے ان خیالات کا اظہار سوالات کے لیے مختص گھنٹے میں جوابات دیتے ہوئے کیا۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




گھر کے بیرونی حصے کو کیسے ڈیزائن کیا جائے؟


Post Views:
0

گھر کا ڈیزائن لوگوں کو آپ کے جمالیاتی ذوق کے بارے میں بتانے کے لیے کافی ہوتا ہے۔ آپ کے گھر لوگوں کا آنا جانا لگا رہتا ہے۔ لوگ باہر سے گھر پر ایک نظر ڈالتے ہی گھر کے بارے میں اور گھر کے اندر مقیم افراد کے بارے میں اپنی راۓ بنا لیا کرتے ہیں۔ یقیناَ یہ بات اس امر کی اہمیت کی نشاندھی کرنے کو کافی ہے کہ گھر کا بیرونی حصہ اور اس کا ڈیزائن کس قدر اہمیت کا حامل ہے۔ آج کی تحریر اسی بارے میں ہے۔ اس تحریر کا مطالعہ کرنے کے بعد آپ کو ایسے بےتحاشا آئیڈیاز ملیں گے کہ جن سے آپ اپنے اندر کے جمالیاتی ذوق کو دنیا کے سامنے لا سکتے ہیں۔

گھر کے آؤٹ ڈور کی اہمیت

یوں اگر دیکھا جائے تو بیرونی حصہ بھی اتنا ہی اہم ہے جتنا گھر کا اندرونی حصہ۔ بہت سے لوگ گھر کے اندرون پر بہت سی رقم خرچ دیتے ہیں یہ سوچ کر کہ باہر سے جب کوئی اندر آئے تو بس گھر کا اندر اتنا خوبصورت ہو کہ اُنھیں باقی کسی چیز کا خیال نہ رہے۔ مطالعے اور مشاہدے سے معلوم ہوا کہ یہ تاثر اتنا دُرست نہیں ہے جتنا مانا جاتا ہے۔ گھر کے اندر کی تزئین و آرائش جتنی بھی حسین اور دلکش ہو، بیرونی حصے کی خوبصورتی اُس کی ترجمانی کے لیے بہت اہم ہے۔

انگریزی کا مقولہ ہے کہ پہلا تاثر ہی آخری ہوتا ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ اگر کسی پر آپ کا پہلا تاثر اچھا پڑ گیا تو اس پر آپ کی شخصیت کا اثر باقی رہے گا۔ اس کے برعکس اگر پہلا تاثر ہی غلط پڑ گیا تو پھر جتنی بھی کوشش کرلی جائے، اُس کی درستگی مشکل سے ہی ہوتی ہے۔

گھر کی قیمت پر گھر کی ظاہری شکل کا اثر

مکان کا بیرونی حصہ ڈیزائن کرنا اور اچھے سے ڈیزائن کرنا ایک مشکل مرحلہ ہے۔ اس میں انسان کی اپنی سوچ، اپنی پسند نا پسند، رنگ و روغن، میٹریل اور ظاہری منظر کا بہت سا عمل دخل ہوتا ہے۔ لیکن اگر یہ مرحلہ کامیابی سے طے کرلیا جائے تو آپ کے گھر کی قیمت کو پر لگ سکتے ہیں۔

لوگ عموماً تصاویر یا باہر سے گزرتے گزرتے ایک گھر کو دیکھ کر ششدر رہ جاتے ہیں۔ وہ اس خواہش کا اظہار کرتے ہیں کہ کاش ایسا گھر ہمارا بھی ہوتا۔ بلکل یہی جملے آپ کے گھر کے لیے بھی ادا ہوسکتے ہیں مگر ان تمام باتوں کو ملحوظِ خاطر رکھتے ہوئے۔ وہ تمام باتیں کون سی ہیں، آئیں جائزہ لیتے ہیں۔

اپنی پسند کو ملحوظِ خاطر رکھیں

گھر انسان اپنے لیے بناتا ہے۔ اس میں اسی کو سکون میسر آتا ہے اور اسی نے وہاں روز رہنا ہوتا ہے۔ گھر روز روز نہیں بنائے جاتے۔ انسان اپنی زندگی کی ساری جمع پونجی ایک گھر کی تعمیر میں لگا دیتا ہے۔ اُس گھر کی تعمیر میں اسی کی پسند کا خیال بھی ہونا چاہیے نہ کہ کسی اور کا۔ لہذا سب سے پہلے آپ نے خود سے سوال کرنا ہے کہ آپ کو کیسا گھر اور اُس کا کیسا ڈیزائن چاہیے۔

اس ضمن میں دیگر لوگوں سے مشورے ہوسکتے ہیں لیکن حتمی تصویر میں آپ کی امنگوں کی ترجمانی بہت ضروری ہے۔ اپنا بجٹ دیکھیں اور خود سے ایک اچھے ڈیزائن پر خرچ کرنے کی وجہ معلوم کریں۔ خود سے پوچھیں کہ آپ کو ایک روایتی ڈیزائن چاہیے یا آپ کا دل آج کل کے جدید بیرونی ڈیزائنز کی طرف مائل ہے۔ خود سے پوچھیں کہ تمام تر دنوں میں آپ کو کس ڈیزائن سے متاثر کیا اور آپ اپنے گھر کی تصویر سے اپنی شخصیت کے کس پہلو کو نمایاں رکھنا چاہتے ہیں۔

بہترین آؤٹ ڈور ڈیزائنز کے لیے تحقیق کریں

جب ابتدائی سوالات کے جوابات میسر آجائیں تو اگلا مرحلہ تحقیق کا آتا ہے۔ خود کو تھوڑا وقت دیں اور جلدبازی میں کوئی فیصلہ نہ کریں۔ بین الاقوامی جریدے دیکھیں اور وہاں سے آئیڈیاز لیں۔ انٹرنیشنل ویب سائٹس کا معائنہ کریں جہاں بہترین ڈیزائنز کی تصاویر میسر آسکیں۔

اب آپ کے ذہن میں یہ بات آئے گی کہ ایسا بنانے کے لیے تو بہت سی رقم درکار ہوگی۔ ایسا نہیں ہے۔ ضروری نہیں ہے کہ من و عن اسی طرح کا ڈیزائن کاپی کیا جائے، بلکہ آپ یوں کر سکتے ہیں کہ وہاں سے ایک آؤٹ لائن لے سکتے ہیں جس سے آپ کا ذہن کھلے گا اور آپ ایک بہتر انداز میں اپنے گھر کی تعمیر کر سکیں گے۔ خود سوچیں کہ اگر آپ ایک بار بغیر تحقیق کے گھر بنا لیں اور بعد میں کسی دن آپ کی نظر ایک شاندار بیرونی ڈیزائن پر پڑ جائے، تو آپ ایک بار افسوس ضرور کریں گے کہ کاش میں تحقیق پہلے کرلیتا، اور بلکل ایسا نہیں مگر اپنے بجٹ میں رہتے ہوئے اس جیسا ڈیزائن ضرور بنا لیتا۔

رنگ و روغن، ایک ضروری پہلو

پینٹ ایکسٹیریر ڈیزائن کا اہم ترین پہلو ہے۔ دن میں کئی بار لائٹنگ تبدیل ہوتی ہے۔ آپ کو اس بات کا اطمینان کرنا ہے کہ آپ اُن رنگوں کا انتخاب کریں جو کہ ہر طرح کے موسم میں سب سے منفرد اور اچھا نظر آئے۔ بہت سے لوگ کہتے ہیں کہ گھر بنانے اور سجانے میں اُنھیں سب سے زیادہ وقت گھر کے بیرونی حصے کے ڈیزائن میں لگا۔ یہاں مکمل طور پر آپ کی اپنی چوائس کار فرما ہوگی۔

عموماً انسان کو ایک رنگ بہت پسند ہوتا ہے۔ لیکن آجکل ایک رنگ کا دور گیا اور اب لوگ مختلف رنگوں کے امتزاج یعنی کامبینیشن کے ساتھ کھیلا کرتے ہیں۔ اس کا طریقہ یہ ہونا چاہیے کہ پہلے ایک رنگ منتخب کریں اور پھر اس کے کامبینیشن کی ریسرچ کریں۔ یوں آپ کا دل کسی ایک کامبینیشن پر مان جائے گا۔ لیکن یہ ذہن میں رکھیں کہ گھر کے بیرونی حصے میں لکڑی کا کام ہو، سٹون ورک ہو یا مرکرزی دروازے کا رنگ، سب کا اُس کلر کمیبینشن کے ساتھ میل کھانا انتہائی ضروری ہے۔

چند کم خرچ والے مفید مشورے

چند مفید مشورے ایسے بھی ہیں جن پر آپ کا نہ زیادہ بجٹ لگے گا اور نہ ہی اتنا وقت، مگر اس کا اثر آپ کے گھر کے ظاہری حصے پر کافی ہوگا۔ گھر کے باہر خوبصورت لکڑی سے بنا ایک ایسا بورڈ لگائیے جس پر آپ کا ہاؤس نمبر درج ہو۔ ساتھ ہی اپنے گھر کے مرکزی دروازے کو خوبصورت سا رنگ دیں۔

اگر دروازہ خستہ حال ہے تو دروازہ تبدیل کرنا بھی اچھا آپشن ہوسکتا ہے۔ گھر کے باہر ایک دو خوبصورت سے پورچ لائٹس نصب کردیں اور اچھی سی کیاری بنوا کر سلیقے سے اچھے سے پھول لگا دیں۔ آج کل منفرد میل باکس کا بھی رجحان ہے، تو ایک بہترین قسم کا میل باکس بھی لگایا جا سکتا ہے۔ دروازے کے باہر ایک جدید ڈیزائن والا ڈور میٹ رکھ دیں اور باہر نظر آنے والی کھڑکیوں کی صفائی کر کے اُن کے کونوں پر اچھا سا رنگ دے دیں۔ ان تمام پر زیادہ رقم بھی خرچ نہیں ہوگی اور گھر کی ظاہری تصویر بھی بہتر اثر رکھے گی۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




سی پیک کا مغربی روٹ اگلے 3 سالوں میں مکمل کیا جائے گا، چیئرمین سی پیک اتھارٹی


Post Views:
49

اسلام آباد: چیئرمین سی پیک اتھارٹی لیفٹننٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ کا کہنا ہے کہ سی پیک کا مغربی روٹ اگلے 3 سال میں مکمل کرلیا جائے گا۔

اُن کا کہنا تھا کہ ملک سی پیک کے دوسرے فیز میں داخل ہورہا ہے جس میں خصوصی توجہ زراعت اور صنعتکاری پر ہوگی۔

اُن کا کہنا تھا کہ ژوب تا کویٹہ روٹ پر کام شروع کرلیا گیا ہے اور اسی طرح ڈیرہ اسماعیل خان تا ژوب اور اسلام آباد تا ڈیرہ اسماعیل خان روٹ پر بھی تیزی سے کام جاری ہے۔

اُنہوں نے کہا کہ مغربی روٹ سے پسماندہ علاقوں کو ترقی کا موقع ملے گا اور یہاں نوکریاں پیدا ہوں گی۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔