بی آر ٹی راہداری منصوبے پر ترقیاتی کاموں کی نگرانی کا ٹھیکہ تفویض کر دیا گیا

[ad_1]



Post Views:
0

کراچی: سندھ ماس ٹرانزٹ اتھارٹی نے دارالہنداسہ (لیڈ انٹرنیشنل فرم) اور نیسپاک کے اشتراک کو مشاورتی خدمات کے لیے تفصیلی ڈیزائن کی تیاری، خریداری میں معاونت اور کراچی موبیلٹی پروجیکٹ کی تعمیراتی نگرانی کا ٹھیکہ دے دیا ہے۔

کراچی موبیلٹی پروجیکٹ ییلو لائن بی آر ٹی کوریڈور داؤد چورنگی سے نمائش تک 21 کلومیٹر لمبی راہداری ہے جس میں 2 بس ڈپو، 28 اسٹیشن، 2 فلائی اوور، 9 انڈر پاس اور ایک دن میں 300,000 افراد سفر کر سکیں گے۔

ییلو لائن بی آر ٹی کے لیے تجویز کردہ بس کا بیڑا 268 ڈیزل ہائبرڈ گاڑیوں پر مشتمل ہوگا جبکہ منصوبے کی کل لاگت 438.9 ملین امریکی ڈالر ہے۔

پروجیکٹ ڈائریکٹر عمران بھٹی کا کہنا ہے کہ یہ منصوبے کی ترقی کے لیے ایک اہم قدم ہے اور کراچی کے لوگ جلد ہی ایک بس ریپڈ ٹرانزٹ سسٹم کا مشاہدہ کریں گے جو ایک محفوظ اور قابل اعتماد ٹرانسپورٹ سسٹم فراہم کرے گا۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




[ad_2]

ٹی پی ایل کا ریئل اسٹیٹ انویسٹمنٹ ٹرسٹ کی شراکت سے 500 ملین ڈالر کا ہدف

[ad_1]


Post Views:
3

اسلام آباد: کاروباری ادارے ٹی پی ایل کارپوریشن نے پاکستان کے سب سے بڑے نجی ریئل اسٹیٹ انویسٹمنٹ ٹرسٹ (آرای آئی ٹی) کے ساتھ شراکتی بنیادوں پر تعیراتی سرگرمیوں سے 500 ملین ڈالر کی آمدن کا ہدف طے کر لیا ہے۔

ٹی پی ایل (آرای آئی ٹی) مینجمنٹ کمپنی کُل ہدف (500 ملین ڈالر) کا 60 فیصد بیرونی سرمایہ کاروں جبکہ 30 فیصد فنڈز مقامی سرمایہ کاری سے حاصل کرنے سے متعلق امور کو عملی شکل دے دی ہے۔

پاکستان میں تعمیراتی سرگرمیوں سے متعلق کاروبار کے فروغ کے لیے وفاقی حکومت کی جانب سے ٹیکس میں چھوٹ سمیت چھوٹے اور درمیانے درجے کے گھروں کی تعمیر پر حکومت کی جانب سے سبسڈی جیسی سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں۔

پاکستان کا پہلا ریئل اسٹیٹ انویسٹمنٹ ٹرسٹ نے کراچی میں کرایہ داری کی بنیاد پر تعمیراتی منصوبے میں سرمایہ کاری پر 12 فیصد سالانہ منافع جبکہ رہاءشی منصوبے لے لیے 8 ارب روپے کی سرمایہ کاری پر 30 فیصد ریٹ آف ریٹرن کا اعلان کر رکھا ہے۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




[ad_2]

گذشتہ مالی سال کے دوران آئی ٹی سروسز کی برآمد سے پاکستان کو 2.12 ارب ڈالر کی آمدن

[ad_1]


Post Views:
3

اسلام آباد: مالی سال 2020-21 کے دوران مختلف ممالک میں انفارمیشن ٹیکنالوجی (آئی ٹی) کی خدمات فراہم کرکے پاکستان نے 2.12 ارب ڈالر کی آمدن حاصل کی۔

وفاقی ادارہ شماریات کے مطابق مالی سال 2019-20 کے دوران خدمات کی فراہمی کے ذریعے حاصل کردہ آمدن 1.439 ارب ڈالر رہی جو کہ گذشتہ ماہ کے مقابلے میں 47.44 فیصد کمی  کے ساتھ زیر مشاہدہ رہی۔

مذکورہ مدت کے دوران کمپیوٹر سروسز میں 50.32 فیصد اضافہ ہوا یہ گزشتہ مالی سال 1.1 ارب ڈالر سے بڑھ کر 2020-21 کے دوران 1.66 ارب ڈالر تک پہنچ گئی۔

کمپیوٹر سروسز میں سافٹ وئیر کنسلٹنسی سروسز کی برآمدات میں 35.50 فیصد اضافہ دیکھا گیا جو کہ 408.974 ملین ڈالر سے بڑھ کر 554.180 ملین ڈالر ہو گیا ہے جبکہ کمپیوٹر سافٹ ویئر سے متعلقہ خدمات کی برآمد اور درآمد بھی 30.88 اضافے کے ساتھ 318.937 ملین ڈالر سے بڑھ کر 417.415 ملین ڈالر ہو گئی ہے۔

ہارڈ ویئر کنسلٹنسی سروسز کی برآمدات 71.84 فیصد کم ہو کر 1.957 ملین ڈالر سے 0.551 ملین ڈالر رہ گئی ہیں جبکہ مرمت اور دیکھ بھال کی خدمات کی برآمدات بھی 56.19 فیصد کم ہو کر 1.511 ملین ڈالر سے 0.662 ملین ڈالر رہ گئی ہیں۔

اعداد و شمار کے مطابق ٹیلی کمیونیکیشن سروسز کی برآمدات میں بھی 37.63 فیصد کا اضافہ دیکھنے میں آیا جو کہ مذکورہ مالی سال کے دوران 328.730 ملین ڈالر سے بڑھ کر 452.430 ملین ڈالر تک پہنچ گئی۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




[ad_2]

آئی ٹی پارک کے لیے پاکستان اور کوریا کے مابین 158 ملین ڈالر کی مالی معاونت کا معاہدہ

[ad_1]


Post Views:
4

اسلام آباد: ایگزم بینک کوریا کراچی میں آئی ٹی پارک بنانے کے لیے پاکستان کو 15 کروڑ 80 لاکھ روپے کا قرضہ دے گا۔

ایگزم بینک کوریا کی جانب سے نئے فریم ورک معاہدے کے تحت آءندہ پانچ سال میں پاکستان کے لیے مالی معاونت کی حد 50 کروڑ ڈالر سے بڑھا کر 1 ارب ڈالر تک کی جائے گی۔

پاکستان کے دورے پر آئے ہوئے کوریا کے اعلی سطع کے وفد نے وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور عمر ایوب سے ملاقات کی اور مذکورہ معاہدے پر دستخط کیے۔

پارک کے قیام سے مقامی اوربین الاقوامی آئی ٹی فرمز کوجدیدترین بنیادی ڈھانچہ فراہم کیا جائیگا اوران اداروں کوکراچی میں اپنے دفاتر کے قیام میں مددملے گی۔

وفاقی وزیرعمرایوب نے مختلف ترقیاتی منصوبوں میں معاونت فراہم کرنے اورکوویڈ 19 کی وبا اورقدرتی آفات سے نمٹنے میں کوریا کی معاونت کی تعریف کی۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




[ad_2]

جولائی 2021، آئی ٹی برآمدات میں 20 فیصد اضافہ

[ad_1]


Post Views:
4

اسلام آباد: جولائی 2021 میں پاکستان کی آئی ٹی برآمدات میں 20 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

یہ اضافہ گزشتہ سال یعنی جولائی 2020 کے مقابلے میں دیکھا گیا۔

اسٹیٹ بینک آف پاکستان (ایس بی پی) کے مطابق جولائی 2021 میں آئی ٹی برآمدات کا کُل حجم 196 ملین ڈالر رہا۔

اس کے برعکس جون 2020 میں آئی ٹی برآمدات کا کُل حجم 163 ملین ڈالر تھا۔

ماہرین اس اضافے کو آئی سیکٹر کے لیے جاری کردہ مراعاتی پیکج سے جوڑ رہے ہیں اور اُن کا کہنا ہے کہ آنے والے دنوں میں آئی ٹی برآمدات میں مزید اضافہ دیکھا جائیگا۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




[ad_2]