سی ڈی اے کا سیکٹر ڈی 12 میں 6 نئے پارکس کا قیام



Post Views:
1

اسلام آباد: کیپیٹل ڈیویلپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) نے اسلام آباد کے سیکٹر ڈی 12 میں 6 نئے پبلک پارکس کا قیام مکمل کرلیا ہے۔

ان پارکس کا مقصد یہ ہے کہ علاقے کے رہائشیوں کو زیادہ سے زیادہ تفریحی مراکز فراہم کیے جائیں۔

اس بارے میں سی ڈی اے کے ڈائریکٹر برائے ماحولیات کا کہنا تھا کہ 5 پارکس سب سیکٹرز میں بنائے گئے ہیں جبکہ ایک بڑا پارک مرکز میں بنایا گیا ہے۔

اُنہوں نے کہا کہ پارکس میں جھولے، جاگنگ ٹریکس، بینچ اور تفریح کا بہت سا سامان نصب کیا گیا ہے تاہم لینڈ سکیپنگ کا عمل عید الفطر کے بعد کی جائے گی۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




گھر میں رنگ و روغن کرتے وقت کن باتوں کا خیال رکھنا چاہیے؟



Post Views:
0

گھر میں رنگ و روغن تو سب ہی کرواتے ہیں۔ یہ گھر کے اہم ترین کاموں میں سے ایک ہے اور اس سے لوگ آپ کے جمالیاتی ذوق کا اندازہ بھی لگاتے ہیں۔ وہ دن گئے جب گھر کی دیواروں پر ہر کچھ سال کے بعد سفیدی کی ایک لہر دوڑا دی جاتی اور کام مکمل سمجھا جاتا۔ آج کا دور جدت کا دور ہے یعنی آج کے دور میں ہر طرف، زندگی کے ہر پیرائے اور ہر میدان میں آپ کو جدت کا پہلو نظر آتا ہے۔ یہی جدت، اگر دیکھا جائے تو رنگ و روغن میں بھی نظر آتی ہے کہ آج کا دور اس لحاظ سے بھی تبدیلی دکھا رہا ہے۔

اس موضوع پر لکھنے کی غرض سے کافی ایسے ہوم پینٹ ٹرینڈز دیکھنے کا اتفاق ہوا کہ آنکھیں ششدر رہ گئیں۔ آج واقعی لوگ ایسے ٹرینڈز بنا رہے ہیں کہ جس سے آنکھوں کو ریفریشمنٹ کا احساس ہوتا ہے۔ رنگ و روغن واقعی وقت لینے والا اور رقم لگنے والا پراجیکٹ ہوتا ہے۔ یہ ایک ایسا مرحلہ ہوتا ہے کہ مشرقی ہاؤس ہولڈز میں تو لوگ اس سے بیشتر وقت بچنے کی کوشش کرتے ہیں۔ اکثر ایسا ہوتا ہے کہ لوگ سالہا سال گھر کی دیواریں نہیں رنگتے۔ ہاں کبھی کبھار ہمت کر کے اس کام کو شروع کرتے ہیں تو اُکھاڑ پچھاڑ اتنی ہوجاتی ہے کہ پھر سو مزید کام نکل آتے ہیں۔ یوں دیواریں رنگنے کا عمل ایک مکمل گھر کی رنویشن کا عمل بن جاتا ہے۔

آج کی تحریر میں بات ہوگی اُن پہلوؤں کی کہ جن کا خیال گھر میں رنگ و روغن کرتے وقت لازمی رکھنا چاہیے۔

کونسا رنگ منتخب کیا جائے؟

سب سے پہلا پوائنٹ ہے کہ گھر میں دیواریں رنگتے وقت کن رنگوں کا انتخاب کیا جائے۔ گو کہ اس سوال کا کوئی ایک جواب نہیں اور آپ اگر سو لوگوں سے اُن کی پسند کے رنگ پوچھیں گے تو شاز و نادر ہی ایسا کوئی موقع آئیگا کہ اُن کے جوابات آپس میں ملتے ہوں۔

جیسا کہ تحریر کے شروع میں عرض کیا جا چکا کہ آج کل سفید رنگ کا زمانہ گیا۔ اب لوگ دیواروں پر کوئی ایک رنگ نہیں کرواتے۔ یعنی اب ملٹی رنگوں کا زمانہ ہے اور ایک سے زائد رنگوں کا کامبینیشن کافی اچھا لگتا ہے۔ اس کا مگر خیال ایسے رکھنا چاہیے کہ دونوں کا آپس میں میل ہونا بہت ضروری ہے۔ ایک ٹرینڈ یہ بھی ہے کہ تین دیواروں پر ایک سا رنگ ہو اور ایک دیوار پر یکسر مختلف رنگ کیا جائے۔ اسی طرح کوشش کرنی چاہیے کہ کمرے میں پڑے قالین یا کسی صوفے کے مطابق یا اُن سے کوئی ایک رنگ چرا کر آپ کسی دیوار پر وہ رنگ کردیں۔

بنیادی اصول

معروف ویب سائٹ 99 ایکڑز کے مطابق رنگ و روغن کا بنیادی اصول یہ ہے کہ 400 مربع فٹ دیوار کے لیے ایک گیلن رنگ درکار ہوتا ہے جبکہ اگر ڈبل کوٹنگ کروائی جائے تو 400 مربع فٹ دیوار پر دو گیلن رنگ لگایا جا سکتا ہے۔ اس حساب سے اگر پینٹ کیا جائے گا تو تسلی رکھی جا سکتی ہے کہ نہ رنگ زیادہ لگے گا اور نہ ہی آپ کو پیسوں کے ضائع ہونے کی پریشانی ہوگی۔

گھر پر رنگ و روغن خود کریں یا کسی ماہر پینٹر سے کروائیں، یاد رکھیں کہ رنگوں کا انتخاب اور انداز آپ کی شخصیت کے بارے میں آنے والوں کو چیخ چیخ کر بتائے گا۔ اس سے پہلے آپ اپنا تعارف کرائیں، آپ کے گھر کا انداز ہی آپ کے بارے میں آنے والوں کو خوب بتا دے گا۔

اچھے پینٹس کا استعمال

یہ تو آپ نے سنا ہوگا کہ رنگوں کا استعمال جیسا بھی ہو، وہ بعد کی بات ہے۔ اولین ترجیح آپ کی رنگوں کی کوالٹی پر ہونی چاہیے کہ آپ ایک اچھی کوالٹی کا پینٹ استعمال کریں نہ کہ کسی سی گریڈ پینٹ کا استعمال کریں جو کہ ذرا سی موسم کی تبدیلی بھی برداشت نہ کر سکے۔

جیسا کہ کہا جاتا ہے کہ مہنگا روئے ایک بار اور سستا روئے بار بار تو کوشش کیجئے کہ رنگوں کی مد میں پیسے نہ ہی بچائے جائیں۔ کوشش کریں کہ اچھے سے اچھے برانڈ کا پینٹ خریدیں اور اسی کو آزمائیں۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ اگر آپ کسی سستے پینٹ باکس کا انتخاب کرتے ہیں تو امکان یہ ہے کہ آپ کو اس دورانیے میں زیادہ بار رنگ کروانا پڑے جس دورانیے میں ایک مہنگا پینٹ باکس شاید تھوڑا سا ہی خراب ہو۔ اس بات سے یہ عیاں ہوتا ہے کہ اکثر پیسے بچانے کا یہ عمل زیادہ پیسوں کے خرچ ہوجانے کا بھی ذریعہ بن جاتا ہے۔

زمین اور دیگر اشیاء ڈھانپ لیں

رنگوں کی سپلائی خریدنے کے بعد آپ کا اگلا قدم ہونا چاہیے کہ آپ گھر کی زمین کو مکمل طور پر ڈھانپ لیں۔ اکثر لوگ یہ غلطی کرلیتے ہیں کہ وہ یہ سوچ لیتے ہیں کہ بعد میں تمام تر اشیاء کو ایک ہی بار صاف کرلیں گے لہٰذا ابھی نہیں ڈھانپتے۔ ایسا نہیں کرنا چاہیے کیونکہ ماہرین کے مطابق بہت ساری چیزیں پینٹ فرینڈلی نہیں ہوتیں۔

اس کا مطلب یہ ہے کہ بہت سی اشیاء پر اگر ایک بار رنگ لگ جائے تو پھر اُن سے رنگ اتارنا کافی حد ٹک مشکل ہوجاتا ہے۔ بعد کی تنگیوں سے بچنے کے لیے آپ کو وقتی قدم اٹھانا چاہیے اور وہ یہ کہ آپ ایک مضبوط کپڑے سے تمام تر اشیاء ڈھانپ لیں تاکہ کسی پر بھی رنگ گرنے کا چانس نہ ہو۔

دُرست ٹولز کا استعمال

ماہرین کہتے ہیں پینٹنگ کے لئے صحیح ٹولز کا استعمال اتنا ہی ضروری ہے جتنا صحیح رنگوں کو منتخب کرنا۔ تاہم ، مہنگے اوزار خریدنے اور اچھے معیار کے اوزار خریدنے میں فرق ہے۔

آخر کار ، آپ کسی ایسے برش کو استعمال نہیں کرنا چاہیں گے جو کام کرنے کے بعد اسٹروکس کے نشانات چھوڑ دے۔ لہذا ، اپنا ہوم ورک مکمل کرتے وقت ایئر اسپریپر یا پینٹ رولرز جیسے صحیح ٹولز حاصل کرنے چاہئیں چاہے اس میں تھوڑی سی اضافی رقم بھی خرچ ہوجائے۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




سال 2022 میں ترقیاتی منصوبوں کے لیے 900 ارب روپے مختص: وزیرِ خزانہ



Post Views:
0

اسلام آباد: وفاقی وزیرِ خزانہ شوکت ترین نے یہ اعلان کیا ہے کہ سال 2022 میں ترقیاتی منصوبوں کے لیے 900 ارب روپے مختص کردیئے گئے ہیں۔

اُنہوں نے بین الاقوامی خبر رساں ادارے بلومبرگ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت انفراسٹرکچر پراجیکٹس پر 40 فیصد خرچ بڑھانے والی ہے تاکہ کورونا وبا کے معاشی اثرات کا تدارک کیا جا سکے۔

اُن کا کہنا تھا کہ حکومت نے معیشت کو 5 فیصد گروتھ پر لے کر جانے کا فیصلہ کیا ہے اور روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے لیے شرح نمو کی یہ سطح ہونا ضروری ہے۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




اپریل میں ایس ای سی پی کے ساتھ 117 تعمیراتی کمپنیوں کا اندراج



Post Views:
0

اسلام آباد: اپریل کے مہینے میں سیکورٹیز اینڈ ایکسچینج کمیشن آف پاکستان (ایس ای سی پی) کے ساتھ 117 کنسٹرکشن کمپنیوں نے اندراج کیا۔

ایس ای سی پی کے مطابق کاروبار میں آسانی کے لیے کیے گئے اقدامات اور تمام تر معاملات کی ڈیجٹآئزیشن سے یہ اضافہ ممکن ہوا۔

ایس ای سی پی نے اپریل میں 2185 نئی کمپنیز کی ریجسٹریشن کی اور کُل ملا کر 141805 کمپنیز کمپنیز کا اندراج کیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق کُل ملا کر 99 فیصد کمپنیاں آن لائن ریجسٹر کی گئیں۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




وزیرِ اعظم نے لاہور میں پیری اربن ہاؤسنگ سکیم کا افتتاح کردیا



Post Views:
1

لاہور: ‏وزیر اعظم عمران خان نے رائیونڈ میں پنجاب پیری اربن ہاؤسنگ سکیم کا افتتاح کردیا۔

اس پراجیکٹ کا سنگ بنیاد لاہور رائیونڈ میں رکھا گیا جبکہ چنیوٹ ، ڈی جی خان ، چونیاں ، خانیوال ، خوشاب ، منڈی بہاؤالدین ، ​​میانوالی ، جلال پور پیر والا اور سرگودھا کے مقامات پر بیک وقت تعمیر کا آغاز ہوگا۔

اس پراجیکٹ کی زمین پنجاب بورڈ آف ریونیو کی جانب سے فراہم کی جائے گی۔ پنجاب بورڈ آف ریونیو نے 35 ڈسٹرکٹس میں 133 احاطوں کی تشخیص کردی ہے جہاں 100 سے 500 تک ہاؤسنگ یونٹس کی تعمیر کی جائے گی۔

وفاقی حکومت مارک اپ سبسڈی سکیم میں ہر ہاؤسنگ یونٹ پر سبسڈی دے گی۔ یہ پراجیکٹ پنجاب حکومت اور نیا پاکستان ہاؤسنگ اینڈ ڈویلپمنٹ اتھارٹی کا مشترکہ ہے۔

فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن اور نیشنل لاجسٹکس سیل ان سائٹس کو ڈیویلپ کریں گے۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




وزیرِ اعظم نے لاہور میں پیری اربن ہاؤسنگ سکیم کا افتتاح کردیا



Post Views:
9

لاہور: ‏وزیر اعظم عمران خان نے رائیونڈ میں پنجاب پیری اربن ہاؤسنگ سکیم کا افتتاح کردیا۔

اس پراجیکٹ کا سنگ بنیاد لاہور رائیونڈ میں رکھا گیا جبکہ چنیوٹ ، ڈی جی خان ، چونیاں ، خانیوال ، خوشاب ، منڈی بہاؤالدین ، ​​میانوالی ، جلال پور پیر والا اور سرگودھا کے مقامات پر بیک وقت تعمیر کا آغاز ہوگا۔

اس پراجیکٹ کی زمین پنجاب بورڈ آف ریونیو کی جانب سے فراہم کی جائے گی۔ پنجاب بورڈ آف ریونیو نے 35 ڈسٹرکٹس میں 133 احاطوں کی تشخیص کردی ہے جہاں 100 سے 500 تک ہاؤسنگ یونٹس کی تعمیر کی جائے گی۔

وفاقی حکومت مارک اپ سبسڈی سکیم میں ہر ہاؤسنگ یونٹ پر سبسڈی دے گی۔ یہ پراجیکٹ پنجاب حکومت اور نیا پاکستان ہاؤسنگ اینڈ ڈویلپمنٹ اتھارٹی کا مشترکہ ہے۔

فرنٹیئر ورکس آرگنائزیشن اور نیشنل لاجسٹکس سیل ان سائٹس کو ڈیویلپ کریں گے۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




سی پیک کا مغربی روٹ اگلے 3 سالوں میں مکمل کیا جائے گا، چیئرمین سی پیک اتھارٹی



Post Views:
49

اسلام آباد: چیئرمین سی پیک اتھارٹی لیفٹننٹ جنرل (ر) عاصم سلیم باجوہ کا کہنا ہے کہ سی پیک کا مغربی روٹ اگلے 3 سال میں مکمل کرلیا جائے گا۔

اُن کا کہنا تھا کہ ملک سی پیک کے دوسرے فیز میں داخل ہورہا ہے جس میں خصوصی توجہ زراعت اور صنعتکاری پر ہوگی۔

اُن کا کہنا تھا کہ ژوب تا کویٹہ روٹ پر کام شروع کرلیا گیا ہے اور اسی طرح ڈیرہ اسماعیل خان تا ژوب اور اسلام آباد تا ڈیرہ اسماعیل خان روٹ پر بھی تیزی سے کام جاری ہے۔

اُنہوں نے کہا کہ مغربی روٹ سے پسماندہ علاقوں کو ترقی کا موقع ملے گا اور یہاں نوکریاں پیدا ہوں گی۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




اپریل میں سیمنٹ کی فروخت میں 40.4 فیصد اضافہ



Post Views:
26

لاہور: آل پاکستان سیمنٹ مینوفیکچررز ایسوسیشن کی جانب سے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق اپریل کے مہینے میں سیمنٹ کی مقامی اور بیرونی فروخت میں 40.4 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

یہ اضافہ اپریل 2020 کے مقابلے میں ریکارڈ کیا گیا اور ماہرین کے مطابق کورونا وبا کے معاشی اثرات کے باوجود یہ ایک بڑی کامیابی ہے۔

رواں سال اپریل میں 4.9 ملین ٹن سیمنٹ کی فروخت ریکارڈ ہوئی جو کہ گزشتہ سال اپریل میں 3.5 ملین ٹن ریکارڈ کی گئی تھی۔

ترجمان آل پاکستان سیمنٹ مینوفیکچررز ایسوسیشن کے مطابق اس سال ماہِ رمضان میں بھی سیمنٹ کی فروخت میں اضافہ دیکھا گیا جو کہ عمومی طور پر کنسٹرکشن کے لحاظ سے ایک جمود کا مہینہ ہوتا ہے۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




فیصل آباد میں رہائشی پلاٹ خریدنے کی 5 بہترین جگہیں



Post Views:
108

فیصل آباد بغیر کسی شک و شبے کے پاکستان کے اہم ترین شہروں میں سے ایک ہے۔ یہ ایک انڈسٹریل حب یعنی اس سے ملک کے بیشتر صنعتی تقاضے پورے ہوتے ہیں۔ مُلکی ٹیکسٹائل سیکٹر کا ایک بڑا حصہ یہاں موجود ہے۔ یہاں کی زراعت سے ملک کی اندورنی ضرویات اور برآمدات کا انتظام ہوتا ہے۔ یہ وہ شہر ہے جس سے ویلیو ایڈیڈ پراڈکٹس کا ہونا ممکن ہوتا ہے اور اس سے قومی خزانے کا پھلنا پھولنا یقینی بنتا ہے۔

2016 میں ملکی جی ڈی پی میں فیصل آباد کی شراکت 18 ارب ڈالر رہی تھی۔ فیصل آباد میں کاروبار اور کاروباری مواقع کا اندازہ اسی بات سے لگا لیں کہ یہاں کا گھنٹہ گھر چوک 8 بازاروں کا ملاپ ہے۔ یہاں کی ڈیویلپمنٹ اتھارٹی ایف ڈی اے ہے یعنی فیصل آباد ڈیویلپمنٹ اتھارٹی ہے۔

یہ دلیر اور خوبصورت لوگوں کا شہر ہے جن کا تعلق ملکی اصل یعنی اپنی ثقافت سے بہت گہرا ہے۔ کہیں بھی کوئی ثقافتی میلہ ہو، کہیں بھی کسی نہ کسی طور سے مُلکی مٹی اور مٹی سے محبت کا ذکر ہو، فیصل آباد کا اور یہاں کی اشیاء کا نام ہمیشہ پیش پیش رہتا ہے۔

جہاں اتنے فوائد کی بات ہوگئی، وہیں یہ بات بھی ہوجائے کہ یہ جگہ رہائش کے لیے بھی بہترین ہے۔ آج کی تحریر یہاں کے بہترین رہائشی علاقوں کے بارے میں ہے۔ آپ کو اس تحریر میں یہاں کے بہترین علاقوں اور وہاں مختلف پلاٹ سائز کے عوض دستیاب ریٹس کا پتہ چلے گا۔

پیپلز کالونی

یہ کالونی فیصل آباد ریلوے اسٹیشن اور ہاکی اسٹیڈیم کے بلکل پاس ہے۔ یہ فیصل آباد کے مختلف مراکز سے جڑانوالہ روڈ، حبیب جالب روڈ اور خواجہ اسلام روڈ کے ذریعے مکمل طور پر ملی ہوئی ہے۔ یہاں بھی مکمل طور پر ایک فعال کمرشل علاقہ ہے، بہترین تعلیمی مراکز ہیں اور اعلیٰ ہیلتھ کیئر کی سہولیات موجود ہیں۔ یہاں بیکن ہاؤس سکول، سٹی سکول، فروبلز انٹرنیشل سکول جیسے معیاری تعلیمی نام موجود ہیں جو کہ آپ کو اس علاقے کی اہمیت اور مانگ کی صورتحال بتانے کے لیے کافی ہیں۔ یہاں 5 مرلہ پلاٹ کی قیمت 95 لاکھ سے 1 کروڑ کے مابین ہے۔ اسی طرح 10 مرلہ پلاٹ کی قیمت 2.5 کروڑ تک ہے اور 1 کنال پلاٹ کی قیمت 3.5 کروڑ سے 4 کروڑ تک کے مابین ہے۔

جناح کالونی

یہ کالونی گلبرگ کے بلکل پاس ہے۔ یہ بھی شہر کے اہم مراکز سے جُڑی ہوئی ہے۔ یہاں پر بھی چہل پہل سے بھرپور کمرشل ایریا ہے جو کہ یہاں رہائشی پلاٹ ڈھونڈنے والوں کو ایک ایڈیشنل فائدہ پہنچاتا ہے۔ اسی کے پاس فیصل آباد کی مشہور گورنمنٹ کالج یونیورسٹی بھی ہے جس تک یہاں سے آسانی سے رسائی حاصل کی جا سکتی ہے۔ یہاں نیشنل بینک آف پاکستان، یونائیٹڈ بینک لمیٹڈ اور مسلم کمرشل بینک جیسے نام ہیں۔ یہیں انڈیپنڈنٹ میڈیکل کالج بھی ہے۔ یہاں 5 مرلہ پلاٹ کی قیمت 1.25 کروڑ سے 1.40 کروڑ تک کے مابین ہے۔ اسی طرح 10 مرلہ پلاٹ کی قیمت 2.20 کروڑ سے 3 کروڑ تک کے مابین ہے اور 1 کنال پلاٹ کی قیمت 3.5 کروڑ سے لے کر 4 کروڑ کے مابین ہے۔

واپڈا سٹی

جیسا کہ نام سے ظاہر ہے، واپڈا سٹی کو ایمپلائیز کوپریٹو ہاؤسنگ سوسائٹی نے بنایا ہے اور یہاں بہترین طرزِ زندگی کا تمام انتظام موجود ہے۔ یہ کنال روڈ کے بلکل ہمراہ ہے اور 650 ایکڑ اراضی پر پھیلا ہوا ہے۔ یہاں بہترین انفراسٹرکچر کا انتظام بھی موجود ہے، روڈوں پر کارپیٹنگ بھی مکمل ہے جبکہ بجلی کی سپلائی بھی بلا تعطل جاری رہتی ہے۔ واپڈا سٹی بہت سی کمرشل سرگرمیوں کا مرکز رہتا ہے جس سے شہر کی مختلف ضروریات کے پورا ہونے کا انتظام ہوتا ہے۔ یہاں 5 مرلہ پلاٹ کی قیمت 50 لاکھ سے 60 لاکھ کے مابین ہے۔ اسی طرح 10 مرلہ پلاٹ کی قیمت 80 لاکھ اور 1.2 کروڑ کے مابین ہے اور 1 کنال پلاٹ کی قیمت 1.8 کروڑ سے لے کر 2.20 کروڑ تک ہے۔

ماڈل سٹی ون

یہ جگہ بھی رہائشی پلاٹ کے لیے ایک اچھا آپشن ہے۔ یہ ایڈن ویلی کے بلکل ساتھ ہے جو کہ کنال ایکسپریس وے کے بلکل قریب ہے۔ ماڈل سٹی ون ابھی ڈیویلپمنٹ کے مرحلے میں ہے اور یہ بات مکمل وثوق سے کہی جا سکتی ہے کہ یہاں رہائشی پلاٹ ہر لحاظ سے بے فکری کی ضمانت ہے۔

ماڈل سٹی ون ایک محفوظ احاطہ ہے، اس کے گرد ایک حفاظتی پٹی ہے جس سے یہاں کے باسیوں کی حفاظت یقینی بنائی جاتی ہے۔ اسی طرح یہاں بہت سے پبلک پارکس، مساجد، واٹر ٹریٹمنٹ پلانٹ اور گراسری اسٹورز موجود ہیں۔
یہاں 5 مرلہ پلاٹ کی قیمت 50 سے 60 لاکھ کے مابین ہے۔ اسی طرح 10 مرلہ پلاٹ کی قیمت 95 لاکھ اور 1.10 کروڑ کے مابین ہے۔

عبداللہ گارڈن

اس فہرست میں آخری جگہ عبداللہ گارڈن ہے جو کنال ایکسپریس وے فیصل آباد کے ساتھ واقع ہے۔ ہاؤسنگ سوسائٹی تعلیمی اور صحت کی سہولیات سے بھرپور ہے۔ مزید یہ کہ اس سوسائٹی میں بنیادی سہولیات جیسے پارکس، مساجد اور تفریحی مراکز موجود ہیں۔ عبداللہ گارڈن کی توسیع کی جارہی ہے جو کہ اس بات کا عکاس ہے کہ کہاں رہائشی پلاٹوں کی کس قدر مانگ ہے اور یہی توسیع ممکنہ خریداروں کو نئے مواقع فراہم کرتی ہے۔
یہاں 5 مرلہ پلاٹ کی قیمت 65 لاکھ سے 75 لاکھ کے مابین ہے۔ اسی طرح 10 مرلہ پلاٹ کی قیمت 1.3 کروڑ سے 1.5 کروڑ تک کے بیچ میں ہے اور 1 کنال پلاٹ کی قیمت 2.5 کروڑ سے 3 کروڑ کے درمیان ہے۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




ایف بی آر ریوینیو میں 16 فیصد گروتھ ریکارڈ


Post Views: 0

کراچی: فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) نے اپریل کے مہینے میں 384 ارب کی ریکارڈ ٹیکس کلیکشن کی جس پر وزیرِ اعظم پاکستان نے ادارے کی تعریف کی۔

وزیرِ اعظم نے ایف بی آر کے لیے ستائشی ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ سال اسی ماہ میں ٹیکس کلیکشن 240 ارب تھی اور یہ گزشتہ سال کے مقابلے میں 57 فیصد کا اضافہ ہے۔

ایف بی آر کو جولائی تا اپریل 3976 ارب ریوینیو حاصل ہوا جبکہ گزشتہ سال جولائی تا اپریل 3438 ارب کا ریوینیو اکٹھا ہوا تھا۔ تفصیلات کے مطابق کُل ملا کر یہ 16 فیصد اضافہ ہے۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




وفاق نے سکھر حیدرآباد موٹروے پراجیکٹ میں تمام رکاوٹیں دور کردیں


Post Views: 0

کراچی: وفاقی حکومت نے حیدرآباد سکھر موٹروے پراجیکٹ میں موجود تمام مالیاتی اور تکنیکی رکاوٹیں دور کردی ہیں۔

یہ موٹروے 306 کلومیٹر طویل ہوگی جسے وفاقی حکومت کی جانب سے سندھ کے لیے سب سے بڑا پراجیکٹ قرار دیا جا رہا ہے۔

وفاقی وزیر برائے پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ اسد عُمر نے گزشتہ دنوں پبلک پرائیویٹ پارٹنرشپ اتھارٹی کے اجلاس کی صدارت کی جس میں گیپ فنڈ اور ٹرانزیکشن اسٹرکچر کا جائزہ لیا گیا۔

اس پراجیکٹ کو بلٹ آپریٹ ٹرانسفر (بی او ٹی) کی بنیاد پر تعمیر کیا جائے گا جس پر 191 ارب کی لاگت آئے گی۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔




واسا ہیڈ کوارٹر میں آتشزدگی کا واقعہ، عملہ و سرکاری ریکارڈ محفوظ


Post Views: 3

راولپنڈی: واٹر اینڈ سینیٹیشن ایجنسی (واسا) کی ہیڈ کوارٹر بلڈنگ لیاقت باغ میں آتشزدگی کا واقعہ پیش آیا تاہم ریسکیو 1122 کی بروقت کارروائی سے کوئی جانی و مالی نقصان نہیں ہوا۔

تفصیلات کے مطابق شام 6 بج کر 20 منٹ پر واسا ہیڈ کوارٹر بلڈنگ لیاقت باغ کے ایک کمرے میں اچانک آگ بھڑک اٹھنے کی اطلاع موصول ہوئی جس پر فوری طور پر ریسکیو 1122 کی ٹیم نے قابو پا لیا۔

منیجنگ ڈائریکٹر واسا راجہ شوکت محمود کے مطابق صرف ایک کمرہ جو کہ واسا اسٹاف کے زیرِ استعمال ہے اُس میں پرنٹر اور میز کو نقصان پہنچا۔

اُن کا کہنا تھا کہ بظاہر آگ لگنے کی وجہ شارٹ سرکٹ معلوم ہوتی ہے تاہم انکوائری کمیٹی تشکیل دے کر انکوائری کے احکامات جاری کردیئے گئے ہیں۔

مزید خبروں اور اپڈیٹس کے لیے وزٹ کیجئے گرانہ بلاگ۔